ویکیپیڈیا:امیدوار برائے بہترین مضمون

یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
یہ ستارہ جس کا ایک کونہ ٹوٹا ہوا ہے، یہ ظاہر کرتا ہے کہ منسلک مواد منتخب ہونے کا اُمیدوار ہے

کسی بھی مضمون کو نامزد کرنے سے پہلے کہ نامزد کنندہ دیگر ساتھیوں کی آراء پوچھ لے۔ نامزد کنندہ کے لئے ضروری ہے کہ وہ ویکیپیڈیا کے قواعد و ضوابط سے کماحقہُ آگاہی رکھتا ہو اور بہترین مضمون کے مرحلے سے گزرنے کے دوران مضمون کے تمام تر اعتراضات و کمزور پہلوؤں کو دور کرسکے۔ وہ نامزد کنندگان جوکہ نامزد کردہ مضمون میں باضابطگی سے اپنا حصہ نہیں ڈال سکے، براہ کرم نامزد کرنے سے پہلے مضمون کے باضابطہ مدیران سے رائے ضرور لے لیں۔ نامزد کنندگان سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ تنقید کا مثبت جواب دیں اور اس سلسلے میں اُٹھائے گئے تمام اعتراضات کو دور کرنے میں پرُ خلوص کوشش و کاوش کریں۔

منتخب مواد:

آلات منتخب مضمون:


نامزدگی کا طریقۂ کار

  1. نامزدگی سے پہلے اس بات کو یقینی بنالیں کہ مضمون بہترین مضمون کے معیار کے مطابق ہے اور اس پر باضابطہ مدیران کی رائے محفوظ کرلی گئی ہو۔
  2. مضمون پر {{امیدوار برائے بہترین مضمون}} کا سانچہ ڈال دیں۔
  3. مضمون کے باضابطہ مدیران کو مطلع کردیں کہ اس مضمون کو امیدوار برائے منتخب مقالہ کے لئے نامزد کیا جارہا ہے۔

تائید و تنقید

براہ کرم نامزد کردہ کسی بھی مضمون کی پر تائید و تنقید کرنے سے پہلے اچھی طرح پڑھ لیں۔

  1. کسی بھی نامزدگی پر ردِ عمل کے اظہار کے لئے نامزد کردہ کے سامنے بائیں جانب دیا گیا “ترمیم“ کا روئے خط کریں (نہ کہ صفحہ کی بالائی جانب دیا گیا “ترمیم“ کا روۓ خط جو کہ پورے صفحے کی ترمیم و تدوین کے لئے ہے)۔
  2. کسی بھی مضمون کی تائید کرنے کے لئے لکھیں {{تائید}} اور ساتھ ہی تائید کرنے کی وجوہات بھی بیان کریں۔ اگر آپ اس مضمون کے باضابطہ مدیر رہ چکے ہیں تو اس کی بھی نشاندہی کریں۔
  3. کسی بھی مضمون پر تنقید کرنے کے لئے لکھیں {{تنقید}} اور ساتھ ہی تنقید کرنے کی وجوہات بھی بیان کریں۔ مضمون کی اُن خامیوں کی نشاندہی کریں کہ جس کے دور کرنے سے مضمون بہتر بنایا جاسکتا ہے۔
  4. تائید و تنقید کے اس مرحلے کے دوران ذاتیات سے قطعاً گریزاں رہیں اور اپنی تائید یا تنقید کی علمی وجوہات بیان کریں۔ خیالی و تصوراتی شکوک و شبہات سے پرہیز کریں۔

موجودہ بہترین مضمون برائے صفحہ اول

Mohammad yousuf.jpg

محمد یوسف (سابقہ نام یوسف یوحنا؛ پیدائش: 27 اگست 1974ء) سابق پاکستانی کرکٹر ہیں۔ 2005ء میں قبول اسلام سے قبل، یوسف کا شمار پاکستان کرکٹ ٹیم کی طرف سے کھیلنے والے چند مسیحی کھلاڑیوں میں ہوتا تھا۔ غریب پس منظر سے تعلق رکھنے والے یوسف نے عمدہ بلے بازی کے باعث اپنی پہچان بنائی اور کرکٹ کی تاریخ میں کئی ریکارڈ اپنے نام کیے۔ یوسف نے اپنے ٹیسٹ کیریئر میں ساڑھے سات ہزار رنز، اور ایک روزہ کیریئر میں ساڑھے نو ہزار رنز بنائے۔ یوسف کو آئی سی سی کی جانب سے 2007ء کا بہترین ٹیسٹ کرکٹر بھی قرار دیا گیا۔ وہ کچھ عرصہ متنازع انڈین کرکٹ لیگ کا حصہ بھی رہے۔ 2009ء-2010ء میں پاکستانی کرکٹ ٹیم نے محمد یوسف کی قیادت میں آسٹریلیا کا دورہ کیا جہاں اسے شکست ہوئی۔ نتیجتاً پاکستان کرکٹ بورڈ نے تحقیقات کے بعد، 10 مارچ 2010ء کو محمد یوسف پر پاکستان کی جانب سے بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کردی۔ بورڈ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ انھیں آئندہ ٹیم کے لیے منتخب نہیں کیا جائے گا کیونکہ انھوں نے ٹیم میں انضباطی مسائل اور اندرونی رسہ کشی کو جنم دیا ہے۔

اس پابندی کے رد عمل میں، محمد یوسف 29 مارچ 2010ء کو بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائر ہوگئے۔

جاری رائے شماریاں

فہرست بہترین مضامین

  1. محمد یوسف، کرکٹ کھلاڑی
  2. مریخ کی آبادکاری
The article is a derivative under the Creative Commons Attribution-ShareAlike License. A link to the original article can be found here and attribution parties here. By using this site, you agree to the Terms of Use. Gpedia Ⓡ is a registered trademark of the Cyberajah Pty Ltd.